اہم خبریں

کشمیرکی صورتحال پرامریکی سینیٹرز کا ٹرمپ کو خط،اہم مطالبہ کردیا

  جمعہ‬‮ 13 ستمبر‬‮ 2019  |  17:49
واشنگٹن(این این آئی )مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پرچار امریکی سینیٹرز نے صدرڈونلڈ ٹرمپ کو خط لکھ دیاہے جس میں مقبوضہ کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے صدر ٹرمپ سے کشمیریوں کی مدد کرنے اور وہاں جنم لیتے انسانی المیے کو جلد ختم کرانے کا مطالبہ کیاگیاہے۔کشمیریوں کو اِن حالات سے نکالنے کے لیے امریکا کا بھارت پر دباو بہت اہم ہوگا۔ ہمارا مطالبہ ہے کہ کشمیر میں پابندیاں، لاک ڈاون اور مواصلاتی نظام کی بندشیں ختم کرنے کے لیے بھارتی وزیراعظم مودی پر دباو ڈالا جائے، یقین ہے کہ کشمیر میں

(خبر جا ری ہے)

المیے کو ختم کرانے میں امریکا اہم کردار ادا کرسکتا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق چار امریکی سینیٹرز نے مقبوضہ کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے صدر ٹرمپ سے کشمیریوں کی مدد کرنے اور وہاں جنم لیتے انسانی المیے کو جلد ختم کرانے کا مطالبہ کر دیا۔ سینیٹرز کا کہنا تھا کہ دو جوہری طاقتوں کے درمیان جاری اس مسئلے کو حل کرنے میں امریکا تعمیری کردار ادا کرسکتا ہے۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو لکھے گئے خط میں سینیٹرز کا کہنا تھا کہ کشمیر کی صورتحال پر بے حد تشویش ہے، کشمیریوں کو اِن حالات سے نکالنے کے لیے امریکا کا بھارت پر دباو بہت اہم ہوگا۔پانچ اگست کو بھارت نے آرٹیکل 370 ختم کرنے کا یکطرفہ اقدام کیا، جس کے بعد لاکھوں بھارتی اہلکار وادی میں تعینات کر کے، مواصلاتی رابطوں پر پابندی لگا کر کرفیو اور لاک ڈاون کا نہ ختم ہونے والا سلسلہ شروع کردیا، ہزاروں لوگوں کو گرفتار کیا گیا، ہر گزرتے دن کے ساتھ کشمیریوں کی زندگی مشکل ترین ہوتی جارہی ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمارا مطالبہ ہے کہ کشمیر میں پابندیاں، لاک ڈاون اور مواصلاتی نظام کی بندشیں ختم کرنے کے لیے بھارتی وزیراعظم مودی پر دباو ڈالا جائے، یقین ہے کہ کشمیر میں جاری انسانی المیے کو ختم کرانے میں امریکا اہم کردار ادا کرسکتا ہے۔

واشنگٹن(این این آئی )مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پرچار امریکی سینیٹرز نے صدرڈونلڈ ٹرمپ کو خط لکھ دیاہے جس میں مقبوضہ کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے صدر ٹرمپ سے کشمیریوں کی مدد کرنے اور وہاں جنم لیتے انسانی المیے کو جلد ختم کرانے کا مطالبہ کیاگیاہے۔کشمیریوں کو اِن حالات سے نکالنے کے لیے امریکا کا بھارت پر دباو بہت اہم ہوگا۔ ہمارا مطالبہ ہے کہ کشمیر میں پابندیاں، لاک ڈاون اور مواصلاتی نظام کی بندشیں ختم کرنے کے لیے بھارتی وزیراعظم مودی پر دباو ڈالا جائے، یقین ہے کہ کشمیر میں جاری

انسانی المیے کو ختم کرانے میں امریکا اہم کردار ادا کرسکتا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق چار امریکی سینیٹرز نے مقبوضہ کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے صدر ٹرمپ سے کشمیریوں کی مدد کرنے اور وہاں جنم لیتے انسانی المیے کو جلد ختم کرانے کا مطالبہ کر دیا۔ سینیٹرز کا کہنا تھا کہ دو جوہری طاقتوں کے درمیان جاری اس مسئلے کو حل کرنے میں امریکا تعمیری کردار ادا کرسکتا ہے۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو لکھے گئے خط میں سینیٹرز کا کہنا تھا کہ کشمیر کی صورتحال پر بے حد تشویش ہے، کشمیریوں کو اِن حالات سے نکالنے کے لیے امریکا کا بھارت پر دباو بہت اہم ہوگا۔پانچ اگست کو بھارت نے آرٹیکل 370 ختم کرنے کا یکطرفہ اقدام کیا، جس کے بعد لاکھوں بھارتی اہلکار وادی میں تعینات کر کے، مواصلاتی رابطوں پر پابندی لگا کر کرفیو اور لاک ڈاون کا نہ ختم ہونے والا سلسلہ شروع کردیا، ہزاروں لوگوں کو گرفتار کیا گیا، ہر گزرتے دن کے ساتھ کشمیریوں کی زندگی مشکل ترین ہوتی جارہی ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمارا مطالبہ ہے کہ کشمیر میں پابندیاں، لاک ڈاون اور مواصلاتی نظام کی بندشیں ختم کرنے کے لیے بھارتی وزیراعظم مودی پر دباو ڈالا جائے، یقین ہے کہ کشمیر میں جاری انسانی المیے کو ختم کرانے میں امریکا اہم کردار ادا کرسکتا ہے۔

loading...

آج کی سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں