اہم خبریں

راولپنڈی میں اجتماعی زیادتی کا نشانہ بننے والی 13 سالہ لڑکی کی ماں نے روتے ہوئے وزیراعظم سے انصاف کیلئے دہائی ، افسوسناک تفصیلات

  منگل‬‮ 12 مئی‬‮‬‮ 2020  |  21:14
اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)13سالہ زیادتی کا نشانہ بننے والی معصوم بچی کی والدہ نے وزیراعظم عمران خان سے انصاف کی اپیل کر دی ۔ تفصیلات کے مطابق 23اپریل کو راولپنڈی میں اجتماعی زیادی کا نشانہ بننے والی کی والدہ نےکہا ہے کہ تفتیشی افسر نے ملزمان کو فائدہ پہنچانے کیلئے نرم الفاظ کااختیار کیے لڑکی کی عمر13کی بجائے 21سال درج کی گئی ہے جبکہ بیٹی کی عمر کا اصل سرٹیفکیٹ بھی دکھا یا ہے جس کے مطابق میری بچی کی عمر12سال اور 8ماہ بنتی ہے ۔ متاثرہ بچی کی ماں نے روتے ہوئے وزیراعظم عمران کان سے انصاف کی اپیل کی

(خبر جا ری ہے)

کا کہنا تھا کہ مجھے انصاف دلایا جائے اور ملزمان کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔ خاتون نے بتایا کہ میں نے تفتیشی افسر کو انصاف اور بروقت ڈی این اے ٹیسٹ کے عوض میڈیکل کرانے کیلئے 3لاکھ روپے رشوت بھی دی ہے ۔ لیکن اس کے باوجود تفتیشی افسر کی جانب سے ملزمان کیساتھ نرمی کا رویہ رکھا جارہا ہے میں رات گئے گھنٹوں پولیس اسٹیشن انتظار کرتی لیکن میری کسی نے نہ سنی الٹا صلح کیلئے لاکھوں روپے دلوانے کیلئے دبائون ڈالا گیا لیکن میں نے اپنی بیٹی کی عزت نہ کرنے کی قسم کھا رکھی ہے جبکہ تک ملزمان کو کڑی سے کڑی سزا نہیں ملتی اس وقت تک میں چین سے نہیں بیٹھوں گی ۔ متاثرہ بچی کی والد نے بتایا کہ پولیس نے جان بوجھ کر عمر زیادہ لکھی تاکہ ملزمان کو زینب الرٹ بل کے تحت ملنی والی سزا سے بچایا جا سکے ۔

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)13سالہ زیادتی کا نشانہ بننے والی معصوم بچی کی والدہ نے وزیراعظم عمران خان سے انصاف کی اپیل کر دی ۔ تفصیلات کے مطابق 23اپریل کو راولپنڈی میں اجتماعی زیادی کا نشانہ بننے والی کی والدہ نےکہا ہے کہ تفتیشی افسر نے ملزمان کو فائدہ پہنچانے کیلئے نرم الفاظ کااختیار کیے لڑکی کی عمر13کی بجائے 21سال درج کی گئی ہے جبکہ بیٹی کی عمر کا اصل سرٹیفکیٹ بھی دکھا یا ہے

جس کے مطابق میری بچی کی عمر12سال اور 8ماہ بنتی ہے ۔ متاثرہ بچی کی ماں نے روتے ہوئے وزیراعظم عمران کان سے انصاف کی اپیل کی ہے اس کا کہنا تھا کہ مجھے انصاف دلایا جائے اور ملزمان کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔ خاتون نے بتایا کہ میں نے تفتیشی افسر کو انصاف اور بروقت ڈی این اے ٹیسٹ کے عوض میڈیکل کرانے کیلئے 3لاکھ روپے رشوت بھی دی ہے ۔ لیکن اس کے باوجود تفتیشی افسر کی جانب سے ملزمان کیساتھ نرمی کا رویہ رکھا جارہا ہے میں رات گئے گھنٹوں پولیس اسٹیشن انتظار کرتی لیکن میری کسی نے نہ سنی الٹا صلح کیلئے لاکھوں روپے دلوانے کیلئے دبائون ڈالا گیا لیکن میں نے اپنی بیٹی کی عزت نہ کرنے کی قسم کھا رکھی ہے جبکہ تک ملزمان کو کڑی سے کڑی سزا نہیں ملتی اس وقت تک میں چین سے نہیں بیٹھوں گی ۔ متاثرہ بچی کی والد نے بتایا کہ پولیس نے جان بوجھ کر عمر زیادہ لکھی تاکہ ملزمان کو زینب الرٹ بل کے تحت ملنی والی سزا سے بچایا جا سکے ۔

loading...

آج کی سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں