اہم خبریں

پاکستانیوں کیلئے بڑی خوشخبری،ایشیائی ترقیاتی بینک نے پاکستان کو کس منصوبے کیلئے بڑا قرضہ دے دیا؟

  جمعرات‬‮ 13 دسمبر‬‮ 2018  |  19:36
اسلام آباد (نیوز ڈیسک)پاکستان میں بجلی کے ترسیلی نظام کو بہتر بنانے کے لیے ایشین ڈیولپمنٹ بینک (اے ڈی بی) اور حکومت میں 28 کروڑ 40 لاکھ ڈالر کا قرض اور گرانٹ معاہدہ طے پاگیا۔اے ڈی بی کی جانب سے جاری ہونے والے اعلامیے کے مطابق ایک تقریب کے دوران اے ڈی بی پاکستان کے ڈائریکٹر ڑیاؤہونگ یانگ اور سیکریٹری برائے معاشی امور نور احمد نے معاہدے پر دستخط کیے۔ ژیاؤہونگ یانگ کے مطابق ’اس منصوبے سے عوام کو محفوظ اور دیرپا بجلی مہیا ہوگی تاکہ عوام اپنی پیداوار اور معیشت میں حصہ داری جاری رکھ سکیں۔ان کا کہنا تھا

(خبر جا ری ہے)

ڈی بی حکومت اور نجی شعبوں کے ساتھ مل کر پاکستان کی پاور سپلائی چین کو بڑھانے کے لیے کام کر رہی ہے جس میں بجلی کے ترسیلی نظام کو بڑھانا بھی شامل ہے۔اعلامیے میں کہا گیا کہ ایم ایف ایف کا مقصد پاکستان میں مضبوط، موثر، ماحول دوست ترسیلی نظام قائم کرنا ہے۔ایم ایف ایف کے اس حصے میں اے ڈی بی نیشنل ٹرانسمیشن اینڈ ڈسپیچ کمپنی (این ٹی ڈی سی) کو ملک کی 1150 میگا واٹ کی بجلی کی مانگ کو موثر اور انداز میں پورا کرنے کیلئے 28 کروڑ ڈالر کے قرض اور 40 لاکھ ڈالر کا گرانٹ فراہم کرے گی۔مقاصد حاصل کرنے کے لیے پنجاب کے لوڈ سینٹرز سے آب و ہوا پر محیط ترسیلی نظام اور ہائی لیول ٹیکنالوجیز لگائی جائیں گی ٗبجلی کی ترسیلی نظام میں سرمایہ کاری میں بڑے پیمانے پر گرڈ سے منسلک توانائی اسٹوریج سسٹم بھی شامل ہوگامقاصد حاصل کرنے کے لیے پنجاب کے لوڈ سینٹرز سے آب و ہوا پر محیط ترسیلی نظام اور ہائی لیول ٹیکنالوجیز لگائی جائیں گی ٗبجلی کی ترسیلی نظام میں سرمایہ کاری میں بڑے پیمانے پر گرڈ سے منسلک توانائی اسٹوریج سسٹم بھی شامل ہوگا جو این ٹی ڈی سی کو بجلی کی ترسیل کو قومی معیار کے مطابق لانے پر مدد فراہم کرے گا ٗاس کے ذریعے این ٹی ڈی سی کی قابل تجدید توانائی کی ترسیل کی صلاحیت کو بڑھانے میں بھی مدد حاصل ہوگی۔

اسلام آباد (نیوز ڈیسک)پاکستان میں بجلی کے ترسیلی نظام کو بہتر بنانے کے لیے ایشین ڈیولپمنٹ بینک (اے ڈی بی) اور حکومت میں 28 کروڑ 40 لاکھ ڈالر کا قرض اور گرانٹ معاہدہ طے پاگیا۔اے ڈی بی کی جانب سے جاری ہونے والے اعلامیے کے مطابق ایک تقریب کے دوران اے ڈی بی پاکستان کے ڈائریکٹر ڑیاؤہونگ یانگ اور سیکریٹری برائے معاشی امور نور احمد نے معاہدے پر دستخط کیے۔

ژیاؤہونگ یانگ کے مطابق ’اس منصوبے سے عوام کو محفوظ اور دیرپا بجلی مہیا ہوگی تاکہ عوام اپنی پیداوار اور معیشت میں حصہ داری جاری رکھ سکیں۔ان کا کہنا تھا کہ اے ڈی بی حکومت اور نجی شعبوں کے ساتھ مل کر پاکستان کی پاور سپلائی چین کو بڑھانے کے لیے کام کر رہی ہے جس میں بجلی کے ترسیلی نظام کو بڑھانا بھی شامل ہے۔اعلامیے میں کہا گیا کہ ایم ایف ایف کا مقصد پاکستان میں مضبوط، موثر، ماحول دوست ترسیلی نظام قائم کرنا ہے۔ایم ایف ایف کے اس حصے میں اے ڈی بی نیشنل ٹرانسمیشن اینڈ ڈسپیچ کمپنی (این ٹی ڈی سی) کو ملک کی 1150 میگا واٹ کی بجلی کی مانگ کو موثر اور انداز میں پورا کرنے کیلئے 28 کروڑ ڈالر کے قرض اور 40 لاکھ ڈالر کا گرانٹ فراہم کرے گی۔مقاصد حاصل کرنے کے لیے پنجاب کے لوڈ سینٹرز سے آب و ہوا پر محیط ترسیلی نظام اور ہائی لیول ٹیکنالوجیز لگائی جائیں گی ٗبجلی کی ترسیلی نظام میں سرمایہ کاری میں بڑے پیمانے پر گرڈ سے منسلک توانائی اسٹوریج سسٹم بھی شامل ہوگامقاصد حاصل کرنے کے لیے پنجاب کے لوڈ سینٹرز سے آب و ہوا پر محیط ترسیلی نظام اور ہائی لیول ٹیکنالوجیز لگائی جائیں گی ٗبجلی کی ترسیلی نظام میں سرمایہ کاری میں بڑے پیمانے پر گرڈ سے منسلک توانائی اسٹوریج سسٹم بھی شامل ہوگا جو این ٹی ڈی سی کو بجلی کی ترسیل کو قومی معیار کے مطابق لانے پر مدد فراہم کرے گا ٗاس کے ذریعے این ٹی ڈی سی کی قابل تجدید توانائی کی ترسیل کی صلاحیت کو بڑھانے میں بھی مدد حاصل ہوگی۔

loading...

آج کی سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں