اہم خبریں

سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان حملے میں ہلاک ایرانی و روسی میڈیا کا دعویٰ‎

  جمعرات‬‮ 17 مئی‬‮‬‮ 2018  |  22:08
ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک)روسی اور ایرانی میڈیا نے سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی ہلاکت کا دعویٰ کیا ہے ، غیر ملکی میڈیا پر چلنے والی خبرو ں میں دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ ممکنہ طور پر سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی موت واقع ہوگئی ہے۔ ایرانی و روسی میڈیا کا دعوی ہے کہ محمد بن سلمان گزشتہ تین ہفتوں سے منظر عام سے غائب ہیں۔ ایک حملے کے نتیجے میں سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان زخمی حالت میں لاپتہ ہوگئے ہیں، اس بات کا دعویٰ ایرانی اور روسی میڈیا نے کیا ہے، ایرانی میڈیا

(خبر جا ری ہے)

ہے کہ سعودی ولی عہد کے زخمی ہونے سے متعلق خبر سعودی خفیہ رپورٹ سے ملی اور یہ خفیہ رپورٹ ایک عرب ملک کو بھی بھیجی گئی، ان کا کہنا تھا کہ 21 اپریل کو شاہی محل پر حملے کے بعد سے سعودی ولی عہد لاپتہ ہیں اور وہ اس حملے کے نتیجے میں زخمی بھی ہوئے تھے۔ ایرانی میڈیا کا کہنا ہے کہ حملے کے بعد سعودی ولی عہد کی سرکاری سطح پر کوئی تصویر جاری نہیں ہوئی۔ ایرانی میڈیا رپورٹ کا حوالہ دیتے ہوئے روسی میڈیا کا کہنا ہے کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان 21 اپریل کے حملے کے بعد سے منظر عام سے غائب ہیں۔ دوسری طرف سعودی سرکاری حکام نے شہزادہ محمد بن سلمان سے متعلق اطلاعات کی تصدیق نہیں کی ہے۔ یاد رہے کہ اکیس اپریل کو سوشل میڈیا پر افواہیں سامنے آئی تھیں کہ سعودی عرب میں شاہی محیل پر حملہ ہو گیا ہے اور ان افواہوں کے ساتھ ساتھ کچھ ویڈیوز اور تصاویر بھی منظر عام پر آئیں مگر ان تمام چیزوں کے وائرل ہونے کے کچھ ہی دیر بعد سعودی حکومت نے باضابطہ اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ شاہی محل پر حملہ نہیں ہوا بلکہ ایک مشکوک ڈرون شاہی محل پر پرواز کر رہا تھا جسے سکیورٹی فورسز نے مار گرایا تھا۔ روسی اور ایرانی میڈیا پر چلنے والی خبروں میں مزید دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ 21 اپریل کو سعودی شاہی محل پر ہونے والا مبینہ حملہ دراصل سعودی شاہی خاندان کے ہی باغی افراد کی جانب سے کی جانے والی بغاوت تھی۔ اس دوران سعودی ولی عہد محمد بن سلمان پر قاتلانہ حملہ کیا گیا جس میں وہ شدید زخمی ہوگئے اور ممکنہ طور پر بعد میں ان کی موت بھی واقع ہوگئی۔تاہم گزشتہ دنوں سعودی خفیہ اداروں نے ایک عرب ملک کو ایک خفیہ رپورٹ بھیجی جس میں سلمان بن محمد کی مبینہ ہلاکت یا زخمی ہونے کا ذکر تھا۔اسی رپورٹ سے سلمان بن محمد کی مبینہ ہلاکت کی خبر ملی۔ جبکہ دوسری جانب تین ہفتے سے کسی بھی سعودی خبر رساں ادارے نے ولی عہد سلمان بن محمد کی کوئی تازہ تصویر بھی جاری نہیں کی۔ ان ہی تمام باتوں کے باعث گمان یہ کیا جا رہا ہے کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان اب اس دنیا میں نہیں رہے۔

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک)روسی اور ایرانی میڈیا نے سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی ہلاکت کا دعویٰ کیا ہے ، غیر ملکی میڈیا پر چلنے والی خبرو ں میں دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ ممکنہ طور پر سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی موت واقع ہوگئی ہے۔ ایرانی و روسی میڈیا کا دعوی ہے کہ محمد بن سلمان گزشتہ تین ہفتوں سے منظر عام سے غائب ہیں۔ ایک حملے کے نتیجے میں سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان زخمی حالت میں لاپتہ ہوگئے ہیں، اس بات کا دعویٰ ایرانی اور روسی میڈیا نے کیا ہے،

ایرانی میڈیا کا کہنا ہے کہ سعودی ولی عہد کے زخمی ہونے سے متعلق خبر سعودی خفیہ رپورٹ سے ملی اور یہ خفیہ رپورٹ ایک عرب ملک کو بھی بھیجی گئی، ان کا کہنا تھا کہ 21 اپریل کو شاہی محل پر حملے کے بعد سے سعودی ولی عہد لاپتہ ہیں اور وہ اس حملے کے نتیجے میں زخمی بھی ہوئے تھے۔ ایرانی میڈیا کا کہنا ہے کہ حملے کے بعد سعودی ولی عہد کی سرکاری سطح پر کوئی تصویر جاری نہیں ہوئی۔ ایرانی میڈیا رپورٹ کا حوالہ دیتے ہوئے روسی میڈیا کا کہنا ہے کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان 21 اپریل کے حملے کے بعد سے منظر عام سے غائب ہیں۔ دوسری طرف سعودی سرکاری حکام نے شہزادہ محمد بن سلمان سے متعلق اطلاعات کی تصدیق نہیں کی ہے۔ یاد رہے کہ اکیس اپریل کو سوشل میڈیا پر افواہیں سامنے آئی تھیں کہ سعودی عرب میں شاہی محیل پر حملہ ہو گیا ہے اور ان افواہوں کے ساتھ ساتھ کچھ ویڈیوز اور تصاویر بھی منظر عام پر آئیں مگر ان تمام چیزوں کے وائرل ہونے کے کچھ ہی دیر بعد سعودی حکومت نے باضابطہ اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ شاہی محل پر حملہ نہیں ہوا بلکہ ایک مشکوک ڈرون شاہی محل پر پرواز کر رہا تھا جسے سکیورٹی فورسز نے مار گرایا تھا۔ روسی اور ایرانی میڈیا پر چلنے والی خبروں میں مزید دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ 21 اپریل کو سعودی شاہی محل پر ہونے والا مبینہ حملہ دراصل سعودی شاہی خاندان کے ہی باغی افراد کی جانب سے کی جانے والی بغاوت تھی۔ اس دوران سعودی ولی عہد محمد بن سلمان پر قاتلانہ حملہ کیا گیا

جس میں وہ شدید زخمی ہوگئے اور ممکنہ طور پر بعد میں ان کی موت بھی واقع ہوگئی۔تاہم گزشتہ دنوں سعودی خفیہ اداروں نے ایک عرب ملک کو ایک خفیہ رپورٹ بھیجی جس میں سلمان بن محمد کی مبینہ ہلاکت یا زخمی ہونے کا ذکر تھا۔اسی رپورٹ سے سلمان بن محمد کی مبینہ ہلاکت کی خبر ملی۔ جبکہ دوسری جانب تین ہفتے سے کسی بھی سعودی خبر رساں ادارے نے ولی عہد سلمان بن محمد کی کوئی تازہ تصویر بھی جاری نہیں کی۔ ان ہی تمام باتوں کے باعث گمان یہ کیا جا رہا ہے کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان اب اس دنیا میں نہیں رہے۔

loading...

آج کی سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں