اہم خبریں

وہ آدمی جس نے ایک ٹکٹ خرید کر 20 سال میں 10 ہزار فلائٹس پر سفر کیا، یہاں تک کہ ائیرلائن کو اس پر فراڈ کا مقدمہ کرنا پڑگیا

  ہفتہ‬‮ 2 دسمبر‬‮ 2017  |  6:00
اکسٹھ سالہ روتھسٹین کو 1987 میں امریکی ائیرلائن نے یکمشت ادائیگی پر گولڈن ٹکٹ سے نوازا۔ وہ اس ٹکٹ کو استعمال کرتے ہوئے کبھی بھی اس ائیرلائن کے ذریعے مزید ادائیگی کئے بغیر سفر کرسکتے تھے۔ آپ کو یہ جان کر حیرانی ہوگی کہ روتھسٹین نے اس سہولت کا استعمال کس وحشیانہ انداز میں کیا۔ اس نے 20 سال کے دوران 10 ہزار دفعہ مفت سفر کیا اور کل ایک کروڑ میل سے بھی زائد سفر بغیر کسی اضافی خرچ کے طے کیا۔ وہ فٹ بال کا میچ دیکھنے، کسی دوست سے ملنے اور حتیٰ کہ کسی دوسرے شہرکھانا کھانے

(خبر جا ری ہے)

فضائی سفر کی سہولت کو استعمال کرتا تھا۔ اخبار ’’دی پوسٹ‘‘ سے بات کرتے ہوئے روتھسٹین نے کہا، ’’میں اس ائیرلائن میں ایک ہیرو بن گیا تھا۔ میں بس ائیرپورٹ جاتا تھا اور مجھے سیٹ مل جاتی تھی۔ میں کہیں جانے سے پہلے سوچتا بھی نہیں تھا۔‘‘روتھسٹین، جو کہ انوسٹمنٹ بینکر ہیں، نے 1987ء میں امریکن ائیرلائن سے خصوصی ائیرپ2, 50, 000 ڈالر میں خریدا تھا جبکہ اپنے ساتھ ایک ساتھی مسافر لے جانے کیلئے مزید 150000 ڈالر ادا کئے تھے، لیکن اس نے اتنی دفعہ مفت سفر کیا اور اپنے ساتھ بے شمار لوگوں کو بھی مف سفر کروایا کہ بالآخر ائیرلائن کو تشویش لاحق ہوگئی۔ سال 2008ء میں ائیرلائن نے روتھسٹین پر فراڈ کا الزام لگایا اور اس سے ائیرپاس چھین لیا۔ امریکن ائیرلائن کا کہنا ہے کہ روتھسٹین اپنے ساتھ اجنبیوں کو لے جانے کیلئے غلط ناموں سے بکنگ کرواتا رہا۔دوسری جانب روتھسٹین کا کہنا ہے کہ ائیرلائن نے پاس واپس لے کر اس پر بڑا ظلم کیا ہے اور اس کی زندگی اور سفر کا شوق تباہ ہوگیا ہے۔ اس نے پاس کی واپسی کے لئے ائیرلائن کے خلاف مقدمہ بھی دائر کردیا ہے۔

اکسٹھ سالہ روتھسٹین کو 1987 میں امریکی ائیرلائن نے یکمشت ادائیگی پر گولڈن ٹکٹ سے نوازا۔ وہ اس ٹکٹ کو استعمال کرتے ہوئے کبھی بھی اس ائیرلائن کے ذریعے مزید ادائیگی کئے بغیر سفر کرسکتے تھے۔ آپ کو یہ جان کر حیرانی ہوگی کہ روتھسٹین نے اس سہولت کا استعمال کس وحشیانہ انداز میں کیا۔

اس نے 20 سال کے دوران 10 ہزار دفعہ مفت سفر کیا اور کل ایک کروڑ میل سے بھی زائد سفر بغیر کسی اضافی خرچ کے طے کیا۔ وہ فٹ بال کا میچ دیکھنے، کسی دوست سے ملنے اور حتیٰ کہ کسی دوسرے شہرکھانا کھانے کیلئےبھی مفت فضائی سفر کی سہولت کو استعمال کرتا تھا۔ اخبار ’’دی پوسٹ‘‘ سے بات کرتے ہوئے روتھسٹین نے کہا، ’’میں اس ائیرلائن میں ایک ہیرو بن گیا تھا۔ میں بس ائیرپورٹ جاتا تھا اور مجھے سیٹ مل جاتی تھی۔ میں کہیں جانے سے پہلے سوچتا بھی نہیں تھا۔‘‘روتھسٹین، جو کہ انوسٹمنٹ بینکر ہیں، نے 1987ء میں امریکن ائیرلائن سے خصوصی ائیرپ2, 50, 000 ڈالر میں خریدا تھا جبکہ اپنے ساتھ ایک ساتھی مسافر لے جانے کیلئے مزید 150000 ڈالر ادا کئے تھے، لیکن اس نے اتنی دفعہ مفت سفر کیا اور اپنے ساتھ بے شمار لوگوں کو بھی مف سفر کروایا کہ بالآخر ائیرلائن کو تشویش لاحق ہوگئی۔ سال 2008ء میں ائیرلائن نے روتھسٹین پر فراڈ کا الزام لگایا اور اس سے ائیرپاس چھین لیا۔ امریکن ائیرلائن کا کہنا ہے کہ روتھسٹین اپنے ساتھ اجنبیوں کو لے جانے کیلئے غلط ناموں سے بکنگ کرواتا رہا۔دوسری جانب روتھسٹین کا کہنا ہے کہ ائیرلائن نے پاس واپس لے کر اس پر بڑا ظلم کیا ہے اور اس کی زندگی اور سفر کا شوق تباہ ہوگیا ہے۔ اس نے پاس کی واپسی کے لئے ائیرلائن کے خلاف مقدمہ بھی دائر کردیا ہے۔

loading...