اہم خبریں

ریڑھ کی ہڈی کا پانی دراصل ہے کیا اور یہ کیوں نکالا جاتا ہے؟لڑکیوں کی ریڑھ کی ہڈی سےیہ پانی کیوں نکالا جارہا تھا ،معاملے نے نیا رخ اختیار کر لیا

  جمعرات‬‮ 15 فروری‬‮ 2018  |  13:45
حافظ آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) صوبہ پنجاب کے شہر حافظ آباد میں خواتین کی ریڑھ کی ہڈی سے پانی نکالنے کے ملزمان کے خلاف مزید 3 مقدمات درج کرلیے گئے، جن میں دہشت گردی اور اقدام قتل سمیت دیگر دفعات شامل ہیں۔حافظ آباد کے محلہ بہاولپورہ میں خواتین کی ریڑھ کی ہڈی سے پانی نکالنے کے واقعے کی تفتیش جاری ہے اور 5 گرفتار ملزمان کے خلاف مزید 3 مقدمات درج کرلیے گئے ہیں، جس کے بعد درج مقدمات کی تعداد 6 ہوگئی ہے۔24 متاثرہ خواتین کے میڈیکل ٹیسٹ بھی کرائے گئے، جن کی ریڑھ کی ہڈیوں پر سرنج کے نشانات پائے

(خبر جا ری ہے)

افسر (ڈی پی او) نے بتایا کہ 2 ملزمان کے پولی گراف ٹیسٹ کی رپورٹ بھی آج موصول ہوجائے گی جس کے بعد تحقیقات میں مدد ملے گی۔جبکہ برطانوی میڈیا کا کہنا ہے کہ حافظ آباد میں خواتین کو بتائے بغیر ان کا اسپائنل فلوئڈ (سی ایس ایف)یعنی ریڑھ کی ہڈے سے پانی نکالنے واقعات متعدد بار سامنے آئے ہیں ۔ جبکہ میڈیا کے کچھ حصوں کے مطابق اس ہڈیوں کا گودا کہا جارہا ہے لیکن لڑکیوں کے جسم سے نکالنے والا جانا گودا نہیں بلکہ سیر پروسائنل فلوئڈ(سی ایس ایف )ہے جو کہ ریڑھ کی ہڈی کا پانی یا سیال مادہ ہے ۔ یہ شفاف سیال مادہ دماغ اور حرام مغز میں پایا جاتا ہے ۔ عام طور پر دماغ اس مادے کے اندر تیرتا ہے اور اگر یہ نہ ہوتو ہلنے جلنے کی وجہ سے دماغ اور حرام مغز ہڈی سے ٹکرا کر زخمی ہونے کا امکان ہوتا ہے ۔ طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ (سی ایس ایف )کو نہ تو علاج میں استعمال کیا جاتا ہے اور نہ ہی ایک فرد سے نکالا گیا مادہ کسی دوسری شخص کو منتقل کیا جا سکتا ہے ۔ اس کا استعمال تب ہی کیا جاتا ہے جب مریض کے اندر پائی جانے والی کسی بیماری کی تشخیص کی ضرورت ہو ۔ دوسری جانب پولیس کا کہنا ہے کہ فی الحال یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ حافظ آباد میں لڑکیوں کے جسم سے نکالے جانے والا سی ایس ایف کسی مقصد کے لیے استعمال ہورہا ہے۔دریں اثنا غریب خواتین کو جہیز فنڈز کے نام پر انکا بون میرو نکالنے والے گروہ سے تفتیش کا عمل جا ری ہے ۔گروہ کے مرکزی ملزم ندیم اور ساتھی ساجد کا پولیس گرافک ٹیسٹ کروانے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کے لئے پولیس نے پنجاب فرانزک سائنس لیبارٹری کو خط ارسال کر دیا ہے جبکہ پانچ متاثرہ خواتین کو میڈیکل کے لئے لاہور ریفر کر دیا گیا ہے۔حافظ آباد میں جہیز فنڈز اور مالی امداد کا جھانسہ دیکر سادہ لوح غریب خواتین کے بلڈ سیمپل اور بون میرو نکالنے والے گروہ سے تفتیش کا عمل جا ری ہےپولیس نے گروہ کے ایک اور ملزم ساجد کو بھی گرفتار کر لیا ہے ۔پولیس زرائع کے مطابق مرکزی ملزم ندیم اور اسکے ساتھی ساجد کا پولیس گرافک ٹیسٹ کروایا جا گا جس کے لئے پنجاب فرانزک سائنس لیبارٹری کو خط ارسال کر دیا گیا۔پولیس کی جانب سے اس کیس کی مزید تفتیش کے لئے مختلف ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں جو مختلف پہلوںکو مد نظر رکھتے ہوئے تفتیش کر رہی ہیں ۔دوسری جانب پانچ متاثرہ خواتین کو میڈیکل ایگزیمینشنکے لئے لاہور ریفر کر دیا گیا ہے جبکہ ملزمان سے برآمد ہونے والے بلڈ سیمپل اور دیگر جسمانی مواد کو بھی ٹیسٹ کے لئے پنجاب فرانزک سائنس لیبارٹری بھجوا دیا گیا ہے ۔

حافظ آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) صوبہ پنجاب کے شہر حافظ آباد میں خواتین کی ریڑھ کی ہڈی سے پانی نکالنے کے ملزمان کے خلاف مزید 3 مقدمات درج کرلیے گئے، جن میں دہشت گردی اور اقدام قتل سمیت دیگر دفعات شامل ہیں۔حافظ آباد کے محلہ بہاولپورہ میں خواتین کی ریڑھ کی ہڈی سے پانی نکالنے کے واقعے کی تفتیش جاری ہے

اور 5 گرفتار ملزمان کے خلاف مزید 3 مقدمات درج کرلیے گئے ہیں، جس کے بعد درج مقدمات کی تعداد 6 ہوگئی ہے۔24 متاثرہ خواتین کے میڈیکل ٹیسٹ بھی کرائے گئے، جن کی ریڑھ کی ہڈیوں پر سرنج کے نشانات پائے گئے۔ڈسٹرکٹ پولیس افسر (ڈی پی او) نے بتایا کہ 2 ملزمان کے پولی گراف ٹیسٹ کی رپورٹ بھی آج موصول ہوجائے گی جس کے بعد تحقیقات میں مدد ملے گی۔جبکہ برطانوی میڈیا کا کہنا ہے کہ حافظ آباد میں خواتین کو بتائے بغیر ان کا اسپائنل فلوئڈ (سی ایس ایف)یعنی ریڑھ کی ہڈے سے پانی نکالنے واقعات متعدد بار سامنے آئے ہیں ۔ جبکہ میڈیا کے کچھ حصوں کے مطابق اس ہڈیوں کا گودا کہا جارہا ہے لیکن لڑکیوں کے جسم سے نکالنے والا جانا گودا نہیں بلکہ سیر پروسائنل فلوئڈ(سی ایس ایف )ہے جو کہ ریڑھ کی ہڈی کا پانی یا سیال مادہ ہے ۔ یہ شفاف سیال مادہ دماغ اور حرام مغز میں پایا جاتا ہے ۔ عام طور پر دماغ اس مادے کے اندر تیرتا ہے اور اگر یہ نہ ہوتو ہلنے جلنے کی وجہ سے دماغ اور حرام مغز ہڈی سے ٹکرا کر زخمی ہونے کا امکان ہوتا ہے ۔ طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ (سی ایس ایف )کو نہ تو علاج میں استعمال کیا جاتا ہے اور نہ ہی ایک فرد سے نکالا گیا مادہ کسی دوسری شخص کو منتقل کیا جا سکتا ہے ۔ اس کا استعمال تب ہی کیا جاتا ہے جب مریض کے اندر پائی جانے والی کسی بیماری کی تشخیص کی ضرورت ہو ۔ دوسری جانب پولیس کا کہنا ہے کہ فی الحال یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ حافظ آباد میں لڑکیوں کے جسم سے نکالے جانے والا سی ایس ایف کسی مقصد کے لیے استعمال ہورہا ہے۔

دریں اثنا غریب خواتین کو جہیز فنڈز کے نام پر انکا بون میرو نکالنے والے گروہ سے تفتیش کا عمل جا ری ہے ۔گروہ کے مرکزی ملزم ندیم اور ساتھی ساجد کا پولیس گرافک ٹیسٹ کروانے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کے لئے پولیس نے پنجاب فرانزک سائنس لیبارٹری کو خط ارسال کر دیا ہے جبکہ پانچ متاثرہ خواتین کو میڈیکل کے لئے لاہور ریفر کر دیا گیا ہے۔حافظ آباد میں جہیز فنڈز اور مالی امداد کا جھانسہ دیکر سادہ لوح غریب خواتین کے بلڈ سیمپل اور بون میرو نکالنے والے گروہ سے تفتیش کا عمل جا ری ہے

پولیس نے گروہ کے ایک اور ملزم ساجد کو بھی گرفتار کر لیا ہے ۔پولیس زرائع کے مطابق مرکزی ملزم ندیم اور اسکے ساتھی ساجد کا پولیس گرافک ٹیسٹ کروایا جا گا جس کے لئے پنجاب فرانزک سائنس لیبارٹری کو خط ارسال کر دیا گیا۔پولیس کی جانب سے اس کیس کی مزید تفتیش کے لئے مختلف ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں جو مختلف پہلوںکو مد نظر رکھتے ہوئے تفتیش کر رہی ہیں ۔دوسری جانب پانچ متاثرہ خواتین کو میڈیکل ایگزیمینشنکے لئے لاہور ریفر کر دیا گیا ہے جبکہ ملزمان سے برآمد ہونے والے بلڈ سیمپل اور دیگر جسمانی مواد کو بھی ٹیسٹ کے لئے پنجاب فرانزک سائنس لیبارٹری بھجوا دیا گیا ہے ۔

موضوعات:

loading...