اہم خبریں

جسم پر سفید دھبوں کو دور کرنے کا ٹوٹکا جانتے ہیں؟

  جمعرات‬‮ 8 مارچ‬‮ 2018  |  16:45
اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) آپ نے اکثر ایسے افراد دیکھیں ہوں گے جن کی جلد پر سفید رنگ کے نمایاں نشان نمودار ہوجاتے ہیں، مگر ایسا کیوں ہوتا ہے اور اس سے بچنا کیسے ممکن ہے؟ یہ مرض یا عارضہ لوگوں کے لیے کافی تشویش بنتا ہے جو کہ کافی نمایاں بھی ہوتا ہے۔ عام طور پر برص نامی نامی اس مرض کے بارے میں یہ خیال عام ہے کہ یہ مچھلی کھانے کے بعد دودھ پینے کا ری ایکشن ہوتا ہے ۔تاہم طبی سائنس اس کو رد کرتی ہے۔ جسم پر یہ سفید دھبے کیوں نمودار ہوتے ہیں؟ درحقیقت

(خبر جا ری ہے)

وقت لاحق ہوتا ہے جب جلد کو اس کی قدرتی رنگت دینے والے خلیات مخصوص رنگدار مادہ کی تیاری چھوڑ دیتے ہیں۔ اگر اسے آغاز میں پکڑ لیا جائے یعنی جب جلد پر دھبے نمودار نہ ہوئے ہوں بلکہ رنگت ہلکی پڑرہی ہو تو جلد کو دوبارہ اصل شکل میں لانے کا امکان بہت زیادہ ہوتا ہے۔ یہ مرض ہر قسم کی جلد پر نمودار ہوسکتا ہے مگر گہری رنگت والی جلد پر زیادہ نمایاں ہوتا ہے۔ طبی ماہرین کے مطابق برص کا علاج متاثرہ جلد کی رنگت میں بہتری تو لاسکتا ہے مگر اس مرض کا مکمل علاج نہیں ہوپاتا۔ اس حوالے سے ماہرین نے مشورہ دیا ہے کہ اگر پپیتے کے ایک ٹکڑے کو جلد کے سفید دھبوں پر رگڑا جائے، پھر اسے خشک ہونے دیں اور پھر لگائیں تو جلد کی رنگت میں بہتری آسکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پپیتے کو رگڑے کے دوران اس بات کا خیال رکھیں کہ پھل سے نکلنے والا عرق جلد میں جذب ہورہا ہو۔ 6 امراض جو جلد سے ظاہر ہوتے ہیں اسی طرح پپیتے کے جوس کو روزانہ پینا بھی جلد کی رنگت کو اصل شکل میں بحال رکھنے میں مددگار ہارمون میلانین کی سطح کو بڑھاتا ہے۔ اس عمل کو کچھ عرصے تک جاری رکھنے پر مریض نمایاں اثرات دیکھ سکیں گے۔ یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ لیں۔

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) آپ نے اکثر ایسے افراد دیکھیں ہوں گے جن کی جلد پر سفید رنگ کے نمایاں نشان نمودار ہوجاتے ہیں، مگر ایسا کیوں ہوتا ہے اور اس سے بچنا کیسے ممکن ہے؟ یہ مرض یا عارضہ لوگوں کے لیے کافی تشویش بنتا ہے جو کہ کافی نمایاں بھی ہوتا ہے۔ عام طور پر برص نامی نامی اس مرض کے بارے میں یہ خیال عام ہے کہ یہ مچھلی کھانے کے بعد دودھ پینے کا ری ایکشن ہوتا ہے ۔تاہم طبی سائنس اس کو رد کرتی ہے۔ جسم پر یہ سفید دھبے کیوں نمودار ہوتے ہیں؟ درحقیقت

یہ اس وقت لاحق ہوتا ہے جب جلد کو اس کی قدرتی رنگت دینے والے خلیات مخصوص رنگدار مادہ کی تیاری چھوڑ دیتے ہیں۔ اگر اسے آغاز میں پکڑ لیا جائے یعنی جب جلد پر دھبے نمودار نہ ہوئے ہوں بلکہ رنگت ہلکی پڑرہی ہو تو جلد کو دوبارہ اصل شکل میں لانے کا امکان بہت زیادہ ہوتا ہے۔ یہ مرض ہر قسم کی جلد پر نمودار ہوسکتا ہے مگر گہری رنگت والی جلد پر زیادہ نمایاں ہوتا ہے۔ طبی ماہرین کے مطابق برص کا علاج متاثرہ جلد کی رنگت میں بہتری تو لاسکتا ہے مگر اس مرض کا مکمل علاج نہیں ہوپاتا۔ اس حوالے سے ماہرین نے مشورہ دیا ہے کہ اگر پپیتے کے ایک ٹکڑے کو جلد کے سفید دھبوں پر رگڑا جائے، پھر اسے خشک ہونے دیں اور پھر لگائیں تو جلد کی رنگت میں بہتری آسکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پپیتے کو رگڑے کے دوران اس بات کا خیال رکھیں کہ پھل سے نکلنے والا عرق جلد میں جذب ہورہا ہو۔ 6 امراض جو جلد سے ظاہر ہوتے ہیں اسی طرح پپیتے کے جوس کو روزانہ پینا بھی جلد کی رنگت کو اصل شکل میں بحال رکھنے میں مددگار ہارمون میلانین کی سطح کو بڑھاتا ہے۔ اس عمل کو کچھ عرصے تک جاری رکھنے پر مریض نمایاں اثرات دیکھ سکیں گے۔ یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ لیں۔

موضوعات:

loading...

آج کی سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں