اہم خبریں

کوکا کولا نے شراب بنانے اور بیچنے کا اعلان کردیا، 125 سالہ تاریخ میں کوکا کولا پہلی بار شراب بنائے گی‎‎

  بدھ‬‮ 7 مارچ‬‮ 2018  |  16:30
اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)کوکا کولا کا اپنی 125 سالہ تاریخ میں پہلی بار شراب بنانے کا اعلان ۔کمپنی کی جانب سےکہا گیا ہے کہ وہ جاپان میں الکوپوپ یا ذائقہ دار الکوحل بنائے گی۔ اعلان میں کہا گیا ہے کہ کمپنی جاپان میں ’’چو ہی‘‘ کی مقبولیت کا فائدہ اٹھائے گی۔ }’چو ہی‘{ ڈبے میں سپارکلنگ مشروب ہے جس میں مقامی شراب شوچو شامل ہوتی ہے۔اس مشروب میں تین سے آٹھ فیصد الکوحل ہوتی ہے۔جاپان میں کوکا کولا کے ایک ایگزیکٹیو نے کہا کہ یہ مشروب بنانے کا مقصد چھونے پیمانے پر مخصوص مارکیٹ کے لیے مشروب بنانا ہے۔کوکا کولا جاپان

(خبر جا ری ہے)

جورج گرڈونو نے کہا: ’ہم نے اس سے قبل کم الکوحل لیول والی مشروبات نہیں بنائیں لیکن اپنے مخصوص کاروبار سے باہر نکلنے کی یہ ایک کوشش ہے۔‘تاہم انھوں نے عندیہ دیا کہ عین ممکن ہے کہ یہ ڈرنک جاپان کے علاوہ کسی اور ملک میں متعارف نہ کی جائے۔’’چو ہی‘‘ شوچو ہائی بال کا مخفف ہے اور اس کو بیئر کے متبادل کے طور پر فروخت کیا جاتا ہے۔ یہ مشروب خواتین میں بہت مقبول ہے۔جاپان کی مشروبات بنانے والی بڑی کمپنیاں کیرن، سنٹوری اور آساہی مختلف ڈرنکس بناتی ہیں اور وہ مسلسل نئے نئے ذائقے متعارف کروانے کی کوشش میں لگی رہتی ہیں۔جیسے جیسے نوجوان نسل صحت کے بارے میں فکرمند ہوتی جا رہی ہے کوکا کولا فزی ڈرنکس سے پانی اور چائے کی جانب بھی بڑھ رہی ہے۔گذشتہ نومبر ویلز فارگو کے تجزیہ کار بونی ہرزوگ نے قیاس آرائی کی تھی کہ کوکا کولا شاید الکوحل بنانا شروع کر دے۔واضح رہے کہ ایلکوپوپ سے مراد عام طور پر میٹھی لیکن الکوحل ڈرنک لی جاتی ہے۔ 90 کی دہائی میں ہوچ، ریف، سمرنوف آئس اور بکارڈی بریزر بہت مشہور ہوئی تھیں۔تاہم ان ڈرنکس کے بارے میں تنازع یہ تھا کہ ان ڈرنکس کی وجہ سے نوجوان نسل میں شراب نوشی میں اضافہ ہو رہا ہے۔کوکا کولا کو پاکستان میں بھی پسند کیا جاتا ہے اس فیصلے پر ملا جلا ردعمل سامنے آرہا ہے۔

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)کوکا کولا کا اپنی 125 سالہ تاریخ میں پہلی بار شراب بنانے کا اعلان ۔کمپنی کی جانب سےکہا گیا ہے کہ وہ جاپان میں الکوپوپ یا ذائقہ دار الکوحل بنائے گی۔ اعلان میں کہا گیا ہے کہ کمپنی جاپان میں ’’چو ہی‘‘ کی مقبولیت کا فائدہ اٹھائے گی۔ }’چو ہی‘{ ڈبے میں سپارکلنگ مشروب ہے

جس میں مقامی شراب شوچو شامل ہوتی ہے۔اس مشروب میں تین سے آٹھ فیصد الکوحل ہوتی ہے۔جاپان میں کوکا کولا کے ایک ایگزیکٹیو نے کہا کہ یہ مشروب بنانے کا مقصد چھونے پیمانے پر مخصوص مارکیٹ کے لیے مشروب بنانا ہے۔کوکا کولا جاپان کے صدر جورج گرڈونو نے کہا: ’ہم نے اس سے قبل کم الکوحل لیول والی مشروبات نہیں بنائیں لیکن اپنے مخصوص کاروبار سے باہر نکلنے کی یہ ایک کوشش ہے۔‘تاہم انھوں نے عندیہ دیا کہ عین ممکن ہے کہ یہ ڈرنک جاپان کے علاوہ کسی اور ملک میں متعارف نہ کی جائے۔’’چو ہی‘‘ شوچو ہائی بال کا مخفف ہے اور اس کو بیئر کے متبادل کے طور پر فروخت کیا جاتا ہے۔ یہ مشروب خواتین میں بہت مقبول ہے۔جاپان کی مشروبات بنانے والی بڑی کمپنیاں کیرن، سنٹوری اور آساہی مختلف ڈرنکس بناتی ہیں اور وہ مسلسل نئے نئے ذائقے متعارف کروانے کی کوشش میں لگی رہتی ہیں۔جیسے جیسے نوجوان نسل صحت کے بارے میں فکرمند ہوتی جا رہی ہے کوکا کولا فزی ڈرنکس سے پانی اور چائے کی جانب بھی بڑھ رہی ہے۔گذشتہ نومبر ویلز فارگو کے تجزیہ کار بونی ہرزوگ نے قیاس آرائی کی تھی کہ کوکا کولا شاید الکوحل بنانا شروع کر دے۔واضح رہے کہ ایلکوپوپ سے مراد عام طور پر میٹھی لیکن الکوحل ڈرنک لی جاتی ہے۔ 90 کی دہائی میں ہوچ، ریف، سمرنوف آئس اور بکارڈی بریزر بہت مشہور ہوئی تھیں۔تاہم ان ڈرنکس کے بارے میں تنازع یہ تھا کہ ان ڈرنکس کی وجہ سے نوجوان نسل میں شراب نوشی میں اضافہ ہو رہا ہے۔کوکا کولا کو پاکستان میں بھی پسند کیا جاتا ہے اس فیصلے پر ملا جلا ردعمل سامنے آرہا ہے۔

موضوعات:

loading...

آج کی سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں